اہم نوٹ



گلی چھوٹی تھی جہاں سے ایک وقت میں ایک ہی گاڑی گزر سکتی تھی، ایسی جگہ پر کار کے ٹائر کا پنکچر ہونا،اوپر سے گرمی کا موسم!50برس کے جمال صاحب کے ہوش اُڑا دینے کے لئے کافی تھا۔ ’’مرتا کیا نہ کرتا‘‘ کے مِصداق انہوں نے کار کے نیچے جیک لگایا اور ٹائر کھولنا شروع کیا۔اسی دوران ایک اور کار اس طرف آنکلی جسے ایک نوجوان چلارہا تھا۔ راستہ بند ملنے پر اس نے ہارن بجانا شروع کیا، ہارن کی کان پھاڑ آواز کو چند سیکنڈ تو جمال صاحب نے برداشت کیا پھر اپنے چہرے سے پسینہ صاف کرتے ہوئے اُٹھے اور


ابّو! ابّو! آپ کو ایک بات بتاؤں؟حَسن نے اپنے ابّوجان کو مُخاطَب کرتے ہوئے کہا۔ جی بیٹا بولیں! داؤد صاحب نے جواب دیا۔ حسن: ابّوجان ! آپ عامر اور صابر کو تو جانتے ہی ہیں آج اسکول میں عامر اور صابر کی لڑائی ہوگئی تھی۔ حسن اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے مزید بولا: ابّوجان! بریک ٹائم )Break Time) میں عامر اور صابر کینٹین پر بیٹھے چِپس کھا رہے تھے کہ عامر نے صابر کو کُہنی ماری تواس کو غصہ آگیا اور اس نے بغیر کچھ سوچے سمجھے عامر کے منہ پر تھپڑ مار دیا، عامر تو ہے ہی لڑاکا اور جھگڑالو، اس نے بھی صابر کا گریبان پکڑلیا۔ بڑی مشکل سے لڑکوں نے ان کو چُھڑایا۔ ٹیچرکو جب ان کی لڑائی کا پتا چلا تو ان کو آفس میں بلاکر بہت زیادہ ڈانٹا


ارشادِ باری تعالیٰ ہے یٰۤاَیُّهَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْۤا اِذَا قِیْلَ لَكُمْ تَفَسَّحُوْا فِی الْمَجٰلِسِ فَافْسَحُوْا یَفْسَحِ اللّٰهُ لَكُمْۚ-وَ اِذَا قِیْلَ انْشُزُوْا فَانْشُزُوْا یَرْفَعِ اللّٰهُ الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا مِنْكُمْۙ-وَ الَّذِیْنَ اُوْتُوا الْعِلْمَ دَرَجٰتٍؕ-وَ اللّٰهُ بِمَا تَعْمَلُوْنَ خَبِیْرٌ(۱۱) ترجمہ: اے ایمان والو! جب تم سے کہا جائے(کہ) مجلسوں میں جگہ کشادہ کرو تو جگہ کشادہ کردو، اللہ تمہارے لئے جگہ کشادہ فرمائے گا اور جب کہا جائے: کھڑے ہوجاؤ تو کھڑے ہوجایا کرو،اللہ تم میں سے ایمان والوں کے اور ان کے درجات بلند فرماتا ہے جن کو علم دیا


مسلمان بھائی کے بغض و کینہ سے بچئے جو کوئی اپنے مسلمان بھائی کی طرف محبت بھری نظر سے دیکھے اور اس کے دل یا سینے میں عَداوَت نہ ہوتو نگاہ لوٹنے سے پہلےدونوں کے پچھلے گناہ بخش دیئے جائیں گے۔(شعب الایمان،ج 5،ص270، حدیث:6624) (9)لباس پہنتے وقت یہ دُعا پڑھئے جو شخص کپڑا پہنے اور یہ دُعا پڑھے: اَلْحَمْدُ لِلّٰہِ الَّذِیْ کَسَانِیْ ھٰذَا وَ رَزَقَـنِیْہِ مِنْ غَیْرِ حَوْلٍ مِّنِّی وَلَا قُـوَّۃٍ یعنی تمام تعریفیں اللہ پاک کے لئے ہیں جس نے مجھے یہ(لباس) پہنایا اور میری طاقت و قوت کے بغیر مجھےیہ عطا فرمایا“ تو اُس کے اگلے پچھلے گناہ بخش دیئے جائیں گے۔(مستدرک،ج5،ص270، حدیث:7486)


ماہنامہ ذوالقعدۃالحرام کی ویڈیوز لائبریری



ماہنامہ ذوالقعدۃالحرام کی بُک لائبریری